نوجوانوں کا صفحہ

SSC 2013
RESULT
ایس ایس سی نتائج ۔ تجزیہ
آندھراپردیش میں دسویں سطح کا بورڈ امتحان SSC سال 2013 ء کے نتائج جاری ہوئے اور گزشتہ دو برسوں سے گریڈ سسٹم لاگو کیا گیا تھا اس سال گریڈ پوائنٹ اور GPA دیا گیا اس دفعہ کامیاب طلبہ کو محصلہ نشانات کے فیصد کے لحاظ سے ہر مضمون کیلئے علحدہ علحدہ گریڈ دیاگیا اور گریڈ کے پوائنٹ دیئے گئے پھر ان پوائنٹس کا اوسط نکالا گیا ۔ جس کو GPA Grade Point Average علاقہ ٹاپر بالکل نہیں کہہ سکتا Topper کا لفظ ختم ہوگیا اور 550 یا اس سے زیادہ نشانات کادور بھی ختم بلکہ مضمون میں 100 میں 100 نشانات کا دور بھی ختم اس پوائنٹ سسٹم اوسط کو رائج کرنے سے ان تمام امور کا خاتمہ ہوگیا ۔ یہ سسٹم یہی تک محدود نہیں ہے بلکہ اب میمو میں بھی نشانات نہیں رہینگے ۔ کوئی طالب علم یہ جان ہی نہیں سکتا کہ اس نے کتنے نشانات حاصل کئے اور طالب علم کو نتیجہ میں ہر مضمون کے گریڈ ، پوائنٹ کے ساتھ فائنل نتیجہ GPA گریڈ پوائنٹ دیا گیا جو اہم ہے اس کی سب سے بڑی وجہ یہ رہی کہ کوئی ادارہ یا طالب علم اپنے حقیقی محصلہ نشانات یا فیصد یا مجموعی نشانات بتا نہیں سکتا اس سال گریڈ پوائنٹ 10 GPA حاصل کرنے والے طلبہ کی تعداد1452 رہی یہ نہیں کہتے کہ ہم اسٹیٹ ٹاپر ہیں کوئی اسٹیٹ ٹاپر ، سٹی ٹاپر نشانات حاصل کئے گریڈس جو 9 دیئے گئے اس میں A گریڈ کے محصلہ 92-100 کے درمیان پر دیا گیا اور پوائنٹ 10 ۔
A2 کیلئے 83-91 نشانات پوائنٹ 9
B1 گریڈ کیلئے 75-82 نشانات پوائنٹ 8
B2 گریڈ کے نشانات 67-74 پوائنٹ 7
C1 گریڈ نشانات 59-66 پوائنٹ 6
C2 گریڈ نشانات 51-58 پوائنٹ 5
D1 گریڈ نشانات 43-50 پوائنٹ 4
D2 گریڈ نشانات 35-42 پوائنٹ 3
اس طرح نشانات ان کے درمیان ہونگے اس کے لحاظ سے گریڈ رہے گا اور پوائنٹ اور پھر اوسط GPA Grade Point Avarage اس سال 2013ء میں SSC کے پبلک امتحان میں 10,49,902 امیدوار ریگولر ( باقاعدہ تعلیم ) کے ذریعہ شریک ہوئے تھے ان میں 9247 نے کامیابی حاصل کی اور کامیابی اور کامیابی کا اوسط 88.04 رہا جو سال گزشتہ سے زائد رہے ۔ اس کے علاوہ 100 فیصد کامیاب پیش کرنے والے مدارس کے تعداد بھی سالگزشتہ 2582 تھی جو اب بڑھ کر 3588 ہوگی ۔
100 فیصد کامیاب اسکولس کی تعداد
گورنمنٹ اسکولس ۔ 172، ضلع پریشد 1103 ، میونسپل اسکولس 15 ، اقامتی ( ریذیڈیشنل ) اسکولس 144 ، امداد اسکولس 64، پرائیویٹ اسکولس 2723 اس طرح جملہ 4326اسکولس نے اس سال صد فیصد کامیابی حاصل کی ۔
نتائج کا ضلع واری تجزیہ
سال 2013 ء میں SSC کے نتائج کا تجزیہ کریں تو ضلع چتور سب سے پہلا مقام حاصل کرتے ہوئے سرفہرست رہا اور کامیابی کا تناسب 94.82 رہا جو کہ مجموعی تناسب سے 6 فیصد زیادہ ہے، دوسرا مقام کڑپہ کو حاصل ہوا ۔ حیدرآباد کا 23 واں اور آخری مقام رہا ۔ حیدرآباد میں کامیابی کا فصید تناسب اس سال 2013 ء میں 78.4 ہے جو ریاست کے مجموعی کامیاب تناسب سے 9 فیصد کم ہے ۔میدک ضلع 67.46 سے سب سے آخری مقام حاصل کیا ۔
10/10 پوائنٹ حاصل کرنے والے
طلبہ کی تعداد 1452 رہی
اس سال SSC میں کون ٹاپر ہے ا۔ اسٹیٹ ٹاپرس کی فہرست ہی نہ رہی کارپورپٹ اسکولس اور گروپ اسکولس جو اسٹیٹ رینکس ، 550 + یا 100 نشانات پیش کرتے ہوئے مسابقت کی ریس میں تھے اب یہ دور ختم ہوگیا کونسا طالب علم کتنے نشانات لایا اس کا اندازہ ہی کرسکتے ہیں ۔ قطعی نشانات اور قطعی فیصد یا مجموعی نشانات نہیں بتاسکتے 10/10 میں 10 پوائنٹ حاصل کرنے والے طلبہ کی تعداد ریاست بھر میں 1452 رہی یعنی ایک ہزار 452طلبہ 10 پوائنٹ حاصل کئے یہ تمام طلباء اسٹیٹ ٹاپرس نہیں کہلائے جاتے ۔ دیگر سرکردہ گروپس میں نارائنا گروپ ، سری چیتانیہ ٹکنو اسکولس ، رویندرا بھارتی گروپ ، گوتم گروپ ، بریلنٹ گروپ اور دیگر کئی اسکولس صرف GPA Grade Point Avarage اور گریڈس کی ہی تشہیر کی ۔ ریاست بھر میں کامیاب لاکھوں طلبہ کو ان کے محصلہ نشانات کے فیصد کے مطابق گریڈ اے کو اس کا اوسط نکالتے ہوئے GPA Grade Point Avarage کی بنیاد پر پوائنٹ دیئے گئے ۔ ریاست بھر کے تمام طلباء کے پوائنٹ حاصل کرنے والوں کی تعداد ذیل کے جدول میں ملاحظہ کرسکتے ہیں۔
طلباء کی تعداد
گریڈ پوائنٹ
طلباء کی تعداد
گریڈ پوائنٹ
32307
8.5
1452
10
63
8.4

9.9
32783
8.3
12747
9.8
33611
8.2
21405
9.7
33686
8
7
9.6
34101
7.5
25692
9.5
33792
7
21
9.4
31862
6.5
27058
9.3
28801
6
27947
9.2
25097
5.5
0
9.1
19916
5
29767
9
13698
4.5
0
8.9
7374
4
30419
8.8
2194
3.5
31343
8.7
101
3
50
8.6
اس میں 9.9 میں صفر ہے چونکہ اس میں ٹکنیکل وجہ سے کوئی طالب علم نہیں آتا اس طرح ان کو غور کریں تو اکثریت 7.5 پوائنٹ کی ہے جس 34371 امیدواروں نے اور دلچسپ بات یہ ہیکہ ٹاپ 10/10 یعنی 10 پوائنٹ کے بعد 9.8 پوائنٹ حاصل کرنے والے طلبہ کی تعداد12747 رہی اور 9.7 ، 21 ہزار طلبہ نے حاصل کیا ۔ اس طرح سال 2013 ء کا ایس ایس سی کا نتیجہ جو کامیابی کے تناسب سے شاندار اور 88 فیصد سے زائد نشانات نہ دینے اور فیصد نہ دینے کی وجہ طلباء ، سرپرستوں اور اسکولس انتظامیہ کیلئے تشویش کا باعث ہے ۔ ابتداء میں GPA گریڈ پوائنٹ کو 6 سے ضرب دے کر محصلہ نشانات مان رہے تھے مثال کے طورپر 7.5 لانے والے طالب علم 450 نشانات سمجھ رہا تھا جو قطعی طورپر صحیح نہیںہے چونکہ یہ اوسط ہے اور گریڈ 10 نشانات کے اوسط سے دیا گیا ۔ A1 گریڈ اور 92 بھی ہوسکتا 93 تا 100 اس طرح طالب علم اپنے گریڈ کے آگے نشانات دیکھ لیں تو ایک نہیں بلکہ ان کے درمیان ہوسکتے ہیں اس لئے امیدوار یہ ذہین نشین کرلیں کہ وہ جس گریڈ میں کامیاب ہوا وہ اصل اور اہم ہے ۔ قطعی نشانات یا گریڈ کو مخفی رکھا گیا ہے ۔

ایجوکیشن / کیریئر
AP میں 21,495 ہائی اسکولس
آندھراپردیش میں SSC بورڈ سے ملحقہ مختلف زمرہ جات / انتظامیہ کے تحت چلنے والے ہائی اسکولس کی تعداد 21,495 ہیں ۔ جن میں گورنمنٹ ہائی اسکولس 1296 ، ضلع پریشد ہائی اسکولس 8341 ، امدادی (Aided) ہائی اسکولس 773 ، میونسپل ہائی اسکولس 286 ، پرائیویٹ ہائی اسکولس 10,049 ، AP ریذیڈیشنل ہائی اسکولس 286 ، سوشیل ویلفیر ریذیڈیشنل اسکولس 290 ، گریجن ویلفیر اسکول 145 ،
SSC-2013 مضمون واری طلبہ کی تعداد
مضمون
کامیاب طلبہ کی تعداد
کامیابی کا فیصد
٭ زبان اول ( فرسٹ لینگویج)
10,00,938
95.35
٭ زبان دوم ( سکنڈ لینگویج )
10,24,136
97.61
٭ زبان سوم ( تھرڈ لینگویج )
9,98,902
95.20
٭ ریاضی ( میاتھس )
10,01,844
95,42
٭ جنرل سائنس
10,05,711
95.79
٭ سماجی علم
10,31,528
98.25
SSC ناکام طلبہ کیلئے اڈوانسڈ سپلیمنٹری امتحان ( انسٹنٹ ) 15 جون تا 28 جون مقرر
ایس ایس سی میں کسی بھی مضمون میں ناکام طلبہ اپنے تعلیمی سال کو ضائع ہونے سے بچانے کیلئے فوری اڈوانسڈ سپلیمنٹری امتحان ( انسٹنٹ ) 15 جون سے رکھا جارہا ہے ۔ طالب علم میں ” E ” گریڈ حاصل کیا وہ ناکام رہا وہ متعلقہ مضمون کیلئے فیس جس اسکول سے حاضر امتحان ہوئے وہاں پر یکم / جون تک داخل کردیں ۔ اڈوانسڈ سپلیمنٹری انسٹنٹ امتحان روزانہ ایک پرچہ 15 جون سے ہوگا اور سوشیل اسٹڈیز کے دوسرے پرچہ 27 جون کو ختم ہوگا ۔
روزگار کے مواقع
ٹیچرس کی ملازمتیں : پرائیویٹ اسکولس کیلئے ٹیوٹر بیورو اور جاب فیر
ٹرینڈ اور ان ٹرینڈ امیدواروں کیلئے ٹیچرس کی جائیدادیں تقریباً ہر اسکول میں مخلوعہ ہوتی ہیں ۔ تعلیمی سال کے آغاز سے قبل امیدوار اسکولس کو تلاش کرتے ہیں اور اسکول انتظامیہ کو ٹیچرس کی ضرورت ہوتی ہیں چنانچہ عام گریجویٹ ، انٹرمیڈیٹ مرد / خاتون امیدوار اور ٹرینڈ ڈی ایڈ B.Ed اور لینگویج پنڈت امیدوار اپنے Resume معہ فون نمبر اور ای میل آئی ڈی محبوب حسین جگر ہال احاطہ ’’ سیاست ‘’ روبرو رام کرشنا تھیٹر عابڈس پر صبح دس بجے تا 5 بجے کے دوران داخل کریں تاکہ انہیں جاب میلہ ، اسکولس انٹرویو اور اچھے اسکولس سے متعلق معلومات دی جاسکیں ۔ اس کے ساتھ اسکول انتظامیہ بھی ان کیلئے درکار اساتذہ کی جائیدادوں کے متعلق مطلع کرسکتے ہیں۔
ٹیچرس کے تقررات کیلئے DSC اور TET کو ضم کرتے ہوئے TRT کردیا گیا
ٹیچرس کے تقررات کیلئے ہونے والے تحریری امتحان DSC کیلئے NCTE نیشنل کونسل فار ٹیچرس ایجوکیشن نے اہلیت کیلئے ایک اور امتحان سال 2010ء سے TET Teachers Eligibility Test کو لازمی قرار دیا ۔ اب سال 2013 کے اوائل سے اس کو ختم کردیا گیا اب ریاستی حکومت اور محکمہ تعلیمات نے آندھراپردیش میں سرکاری اساتذہ کے تقررات کیلئے سبز جھنڈی دکھاتے ہوئے تمام تر تیاری مکمل کی اور SGT سکنڈری گریڈ ٹیچرس S.A اسکول اسسٹنٹ کیلئے لینگویج پنڈت UPT اردوپنڈت ، ہندی پنڈت HPT ، TPT تلگو پنڈت کے ساتھ فزیکل ایجوکیشن PET کیلئے مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کرے گی اس کیلئے DSC اور TET کو ضم کرتے ہوئے ایک ہی امتحان TRT – Teachers Recresitment Test کردیا جائے گا اور یہ امتحان بھی TRT – Paper – I اور TRT – Paper – II ہوگا ۔ D.Ed ، B.Ed اور UPT امیدوار TRT کی کوچنگ کیلئے احاطہ دفتر سیاست محبوب حسین جگر ہال روبرو رام کرشنا تھیٹر عابڈس پر اپنے نام رجسٹریشن کروائیں ۔ کوچنگ پروگرام اور ٹسٹ میٹریل سے استفادہ کریں ۔

Leave a Comment