ای وی ایم کا استعمال جاری رہے گا ۔ چیف الیکشن کمیشن

الیکٹرانک ووٹنگ مشین( ای وی ایم) کو لے کر جاری تنازعہ کے درمیان چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑہ نے یہ واضح کر دیا ہے کہ الیکشن کمیشن ای وی ایم کا استعمال جاری رکھے گا۔انہوں نے جمعرات کو کہا کہ ہم بیلٹ پیپرز کے دور میں لوٹ نہیں سکتے۔ قومی دارالحکومت دلی میں منعقد ایک پروگرام میں انہوں نے کہا کہ ’’ بیلٹ پیپرز کی طرف لوٹنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔ ہم ای وی ایم کا استعمال کرتے رہیں گے‘‘۔

بتا دیں کہ کئی اپوزیشن پارٹیاں مسلسل یہ مطالبہ کر رہی ہیں کہ آئندہ لوک سبھا انتخابات ای وی ایم کے بجائے بیلٹ پیپرز سے کرائے جائیں۔

اروڑہ کا یہ بیان لندن میں ہوئے ہیکاتھون کے دو دن بعد ہی آیا ہے۔ اس ہیکاتھون میں امریکی ہیکر سید شجاع نے دعویٰ کیا تھا کہ ای وی ایم کو ہیک کرنا مشکل ہے لیکن ناممکن نہیں ہے۔ شجاع نے دعویٰ کیا تھا کہ 2014 کے عام انتخابات میں ای وی ایم کو ہیک کیا گیا تھا۔

ان دعووں کو مسترد کرتے ہوئے اروڑہ نے کہا کہ 2014 سے اب تک ہوئے انتخابات میں الگ۔ الگ نتائج آئے ہیں، ایسے میں یہ کہنا غلط ہو گا کہ ای وی ایم میں خرابی ہے۔ انہوں نے کہا ’’ الیکشن میں اگر’ ایکس‘ کی جیت ہوتی ہے تو ای وی ایم ٹھیک ہیں اور نہیں تو ای وی ایم خراب ہیں۔ ای وی ایم کوئی فٹبال نہیں ہیں‘‘۔

TOPPOPULARRECENT